Home / Ahadith-e-Mubarka / ALLAH’s Apostle (اللہ صلی اللہ علیہ وسلم) about a person passing in front of another person who was praying

ALLAH’s Apostle (اللہ صلی اللہ علیہ وسلم) about a person passing in front of another person who was praying

حدثنا عبد الله بن يوسف قال أخبرنا مالک عن أبي النضر مولی عمر بن عبيد الله عن بسر بن سعيد أن زيد بن خالد أرسله إلی أبي جهيم يسأله ماذا سمع من رسول الله صلی الله عليه وسلم في المار بين يدي المصلي فقال أبو جهيم قال رسول الله صلی الله عليه وسلم لو يعلم المار بين يدي المصلي ماذا عليه لکان أن يقف أربعين خيرا له من أن يمر بين يديه قال أبو النضر لا أدري أقال أربعين يوما أو شهرا أو سنة

عبداللہ بن یوسف، مالک، ابوالنضر (عمربن عبیداللہ کے آزاد کردہ غلام) ، بسر بن سعید رضی اللہ تعالیٰ عنہ روایت کرتے ہیں کہ زید بن خالد نے ان کو ابوجہیم کے پاس بھیجا، تاکہ وہ ان سے پوچھیں کہ انہوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے نماز پڑھنے والے کے آگے سے گذرنے والے کے بارے میں کیا سنا ہے، تو ابوجحیم نے کہا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے کہ اگر نمازی کے آگے سے گذرنے والا یہ جان لیتا کہ اس پر کس قدر گناہ ہے، تو اس کو نمازی کے سامنے نکلنے سے چالیس (سال) کھڑا رہنا زیادہ پسند ہوتا، ابونضر (راوی حدیث) کہتے ہیں کہ میں نہیں جانتا کہ چالیس دن کہا یا چالیس ماہ یا چالیس برس۔

Narrated Busr bin رضی اللہ تعالیٰ عنہ Said: That Zaid bin Khalid sent him to Abi Juhaim to ask him what he had heard from ALLAH’s Apostle (اللہ صلی اللہ علیہ وسلم) about a person passing in front of another person who was praying. Abu Juhaim replied, “ALLAH’s Apostle (اللہ صلی اللہ علیہ وسلم) said, ‘If the person who passes in front of another person in prayer knew the magnitude of his sin he would prefer to wait for 40 (days, months or years) rather than to pass in front of him.” Abu An-Nadr said, I do not remember exactly whether he said 40 days, months or years

صحیح بخاری:جلد اول:حدیث نمبر 486 حدیث مرفوع مکررات 9 متفق علیہ 3 بدون مکرر

Comments

comments

About Fiaz Ahmed

Leave a Reply